Breaking News
Home / ہیلتھ / معدہ خراب ہے ، کھانا ہضم نہیں ہوتا

معدہ خراب ہے ، کھانا ہضم نہیں ہوتا

معدے خراب ہے کھانا ہضم نہیں ہوتا۔ اگر معدے میں جلن ہوتی ہے تو صرف یہ تین کام کریں ۔ معدے زندگی بھر خراب نہیں ہوگا۔ اگر ہم صرف اور صرف پیار ے پیغمبر جنا ب محمد ﷺ کا جو کھانے کا طریقہ ہے ۔ اس کو اپنا لیں۔ تو معدے کی جتنے امراض ہیں۔وہ دور ہوجائیں۔ اس کو سمجھیں ۔ آج سے کئی ہزار سال پہلے ایک شخص آئے تھے۔

ان کا نام حکیم لقمانؒ ہے۔ اگر قرآن میں اللہ تعالیٰ کسی کانام عزت سے لے لیں۔ تو وہ ہمارے قابل احترام ہوجاتے ہیں۔ حکیم لقمانؒ نے اپنے بیٹے کو نصیحت کی کہ بیٹا دانتوں کا کام کبھی آنتوں سے نہ لینا۔ اور دوسری جگہ آپ نے فرمایا : بیٹا یہ جو معدے ہے نا یہ بدن کا سردار ہے جس انسان کے بدن کا سردار کمزور پڑ گیا۔ اس کی رعایا خود بخود کمزور پڑ جائے گی۔ معدے سردا ر ہے۔ سردا ر صیحح ہوگا۔ تو کھانا ہضم ہوگا۔ کھانا ہضم ہوگا تو طاقت ملے گی۔

دما غ کو بھی، دل کو بھی ، گردوں کو بھی ، پھیپھڑوں کو بھی ، آنتوں کو بھی ، ہڈیوں کو بھی ، گ وشت کو بھی ، نظر تیز ہوگی، آواز مضبوط ہوگی، سماعت مضبوط ہوگی جب معدے مضبوط ہوگا۔ پیارے پیغمبر جنا ب محمدﷺ کے طریقے کو دیکھو۔ آپ ﷺنے فرمایا : یہ جوقرآن کی آیت “واکلو واشربو ولا تسرفوا” اس آیت کے علاوہ اللہ تعالیٰ اگر طب کے علاوہ کچھ نہ بھی اتارتا تو یہ ایک آیت ہی کافی تھی ۔ اس کا مطلب ہے اور کھاؤ اورپیو اور اسراف نہ کرو۔ اسراف مطلب زیادتی نہ کرو۔ اور آج جتنے لوگوں کے معدے خراب ہیں۔ اس کی ایک وجہ ہے کہ انہوں نے فطر ت کو بدلا ہے۔ آپ پوری کائنا ت کے جانوروں کو دیکھیں جنہیں اللہ تعالیٰ نے پیدا کیا۔ سارے جانور فطر ت کے مطابق زندگی گزارتے ہیں۔ کوئی جانور کھانے میں پانی نہیں پیتا۔ اس لیے بیمار نہیں ہوتا۔ اور ہم لوگ پانی کیوں پیتے ہیں ؟

کیونکہ ہم کھانے کو اچھی طرح سے چباتے نہیں ہیں۔ دو چار بار چبایا اور نگلنے کی کوشش کی۔ حلق میں کھانا اٹک گیا۔ پانی کے ساتھ اس کو آگے دھکیلتے ہیں۔ صر ف یہ طریقہ سمجھ لیں کہ کھانے سے آدھا گھنٹہ پہلے پانی پئیں۔ کھانا کھانے کے ڈیڑھ گھنٹہ بعد پانی پئیں ۔ اور ایک لقمے کو بتیس مرتبہ چبائیں ۔ آج کی ماڈرن سائنس کہتی ہے دانت چار طرح کے ہیں۔ ایک نوک والے کاکام ہے کاٹنا۔ دوکاکام ہے پھاڑنا، تین کاکام ہے چیرنا۔ اور چار کاکام ہے پیسنا۔ کاٹنا، پھاڑنا، چیرنا اور پیسنا یہ کام تھا دانتوں کا ۔ کیونکہ اللہ تعالیٰ نے دانتوں کو بنا یا ہے کیلشیم کا ، سٹون کا ، پتھر کا، اور معدے کو بنایا ہے فائبرکا۔ اسی لیے حکیم لقمان ؒ نے فرمایا تھا کہ بیٹا دانتوں کا کام کبھی آنتوں سے مت لینا۔ اب جو کام دانت کرسکتے ہیں۔ کیا معدہ کرسکتا ہے ۔ جب وہ نہیں کرے گا۔ آپ کھانے کو صیحح طرح کاٹو گے نہیں۔

تو معدے اس کو ہضم کیسے کرے گا۔ اس بات کو سمجھیں کہ کھانا سب سے پہلے کیا بنتا ہے ؟ یہ چھوٹے چھوٹے ٹکڑے بنتا ہے۔ اگر آپ بتیس بار کھانا منہ میں چبا لیا جائے تو وہ کھانا منہ میں پانی بن جائے گا۔ اور آپ کا معدہ بہت ہی آسانی سے ہضم کرلے گا۔ معدے کا بہترین علاج ہے کھانے میں پانی چھوڑ دو۔ اور کھانے کو بتیس مرتبہ چباؤ اور ۔ تیسری بات کوئی جانور عصر کے بعد کھانا نہیں کھاتا۔ کیا آپ نے کبھی دیکھا ہے کہ کسی چڑیاکو، کسی کبوترکویاکسی بھی پرندے کو یا پھر کسی جانور کو کہ وہ عصر گزرنے کےبعد آپ کو زمین پر نظرآئے وہ کہاں ہوتے ہیں؟ وہ اپنے گھروں کی طرف اڑنے کی تیاریاں کررہے ہوتےہیں۔ اور مغرب کےبعد تو کوئی پرندہ نظر ہی نہیں آتا۔ آج آپ حکمت کی ایک اور بات جان لیں۔

کہ آج کی میڈیکل سائنس کہتی ہے کہ سارا سال معدے کے سورج کے ساتھ چلتا ہے ۔اور سال میں ایک ماہ ایسا آتا ہے جب معدے سورج کے ساتھ نہیں چلتا ہے۔ اس ماہ کو ہمارے اسلام میں ” رمضان ” کہا جاتا ہے۔ سائنس کہتی ہے ان دنوں میں سورج نکلنے سے پہلے کھاؤ۔ اور سور ج غروب ہونے کے بعد کھاؤ۔ لیکن آپ جانتے ہیں کہ یہی باتیں ہمارا دین ، ہمارا اسلا م ہمیں کئی سال پہلے بتا چکا ہے۔
سمجھا چکا ہے۔ لیکن بات سمجھنے کی ہے۔ آج کی سائنس جو باتیں کررہی ہے۔ وہ ہمار ا دین اسلام کئی ہزار سال پہلے بتا چکا ہے۔ اس لیے دین اسلام کو اچھے سے سمجھیں ۔

Share

About admin

Check Also

صرف ایک گلاس نیم گرم پانی سے کریں شوگر، جگر اور کولیسٹرول کنٹرول مگر

صرف ایک گلاس نیم گرم پانی سے کریں شوگر، جگر اور کولیسٹرول کنٹرول مگر صرف …

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Powered by themekiller.com