Breaking News
Home / پاکستان / سر میری نیب سے جان چھڑوا دیں ، اس عمر میں مجھ سے دھکے نہیں کھائے جاتے ۔۔۔

سر میری نیب سے جان چھڑوا دیں ، اس عمر میں مجھ سے دھکے نہیں کھائے جاتے ۔۔۔

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) واضح رہے کہ  پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا ہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور سندھ کے سابق گورنر محمد زبیر نے برّی فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ سے اپنی جماعت کے قائد نواز شریف اور ان کی بیٹی اور مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کے حوالے سے دو ملاقاتیں کی تھیں۔

بی بی سی کی ایک رپورٹ کے مطابق ۔۔۔۔ فوج کے ترجمان کا کہنا تھا کہ محمد زبیر اگست کے آخری ہفتے اور پھر رواں ماہ کی سات تاریخ کو جنرل باجوہ سے ملے تھے۔ان کا کہنا تھا کہ یہ دونوں ملاقاتیں محمد زبیر کی درخواست پر ہی ہوئی تھیں اور ان میں فوج کے خفیہ ادارے آئی ایس آئی کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل فیض بھی موجود تھے۔میجر جنرل بابر افتخار کا کہنا تھا کہ ’دونوں ملاقاتوں میں انھوں نے میاں نواز شریف صاحب اور مریم نواز صاحبہ کے حوالے سے ہی بات چیت کی۔’ ترجمان کا مزید کہنا تھا: ‘ان ملاقاتوں میں جو بھی بات چیت ہوئی، آرمی چیف نے ان پر واضح کر دیا کہ جو بھی ان کے قانونی مسائل ہیں وہ پاکستان کی عدالتوں میں حل ہوں گے اور جو سیاسی مسائل ہیں ان کا حل پارلیمنٹ میں ہوگا، ان معاملات سے فوج کو دور رکھا جائے۔’تاہم محمد زبیر نے اس دعوے کی تردید کی ہے کہ ان کی فوج کے سربراہ سے ملاقاتوں کا مقصد نواز شریف یا مریم نواز کے لیے کسی ریلیف کے بارے میں بات کرنا تھا یا وہ جنرل باجوہ سے ان کے نمائندے کے طور پر ملے تھے دوسری جانب سینئرصحافی عارف حمید بھٹی نے دعویٰ کیا ہے کہ ایک جنرل سے ملاقات میں لیگی رہنما احسن اقبال نے درخواست کی کہ ان کی نیب کے مقدمات سے جان چھڑائی جائے۔نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے عارف حمید بھٹی نے دعویٰ کیا کہ آرمی چیف سے ملاقات کرنے والے رہنمائوں میں احسن اقبال اور خواجہ آصف بھی شامل تھے۔

خواجہ آصف احسن اقبال کو لے کر نہیں جا رہے تھے لیکن وہ زبردستی گئے ، احسن اقبال نے کہا کہ مجھے بڑے میاں صاحب نے کہا ہے کہ آپ نے بھی جانا ہے۔عارف حمید بھٹی نے کہا کہ احسن اقبال سچ بولنے سے کتراتے ہیں۔ یہ آرمی چیف اور ڈی جی آئی ایس آئی کے علاوہ ایک اور تیسرے جنرل کو سائیڈ پر لے کر گئے ہیں اور ان سے بات کی ہے۔ احسن اقبال نے ان سے کہا کہ میرے پیچھے نیب پڑی ہے، اس سے تو میری جان چھڑادیں، آپ مجھ سے کیا چاہتے ہیں، میں اس عمر میں سزا نہیں کاٹ سکتا۔دریں اثنا میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہاکہ سپریم کورٹ میں پنجاب کے بلدیاتی نمائندوں کی جانب سے درخواست سماعت کے لئے مقرر تھی، بدقسمتی سے ان نمائندوں کو نہیں سنا گیا مزید پندرہ دن بعد سنا جائے گا۔انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت نے غیر قانونی طور پر پنجاب کے پچاس ہزار بلدیاتی نمائندوں کو نوکریوں سے فارغ کیا۔ انہوںنے کہاکہ سوا سال سے یہ پچاس ہزار نمائندے عدالتی نظام کے دروازے کھٹکھٹارہے ہیں، صوبہ پنجاب موجودہ حکومت کے انتقامی ایجنڈے پر ہے۔احسن اقبال نے کہاکہ آج پنجاب دو سال بعد ہر شعبے میں تباہ ہوچکا ہے، پنجاب میں جو شہر چمکتے تھے وہ گندگی کا ڈھیر بن چکی ہیں، ایک شخص کے لئے پنجاب کو رسک پر لگا دیا گیا۔احسن اقبال نے کہاکہ بلدیاتی نمائندوں کو ختم کر کے ٹائیگر فورس کو اختیار دئیے جا رہے ہیں۔چیف جسٹس سے درخواست ہے پنجاب کے بلدیاتی نمائندوں کا حق لوٹایا جائے۔

Share

About admin

Check Also

ایک شوہر نے شادی کی پہلی رات ہی اپنی بیوی سے انکار کردیا، اورپھر بیوی آگے بڑھی اور اپنے ہاتھ

ایک شوہر نے شادی کی پہلی رات ہی اپنی بیوی سے انکار کردیا، اورپھر بیوی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Powered by themekiller.com