Breaking News
Home / پاکستان / چوہدری برادران ایک دفعہ پھر سے اپنی چودراہٹ چمکانے کو تیا ر ، حکومت سےبڑامطالبہ کردیا

چوہدری برادران ایک دفعہ پھر سے اپنی چودراہٹ چمکانے کو تیا ر ، حکومت سےبڑامطالبہ کردیا

لاہور(ویب ڈیسک)چودھری شجاعت حسین اور چودھری پرویز الہیٰ نے کہا ہے کہ گلگت بلتستان میں الیکشن منصفانہ اور شفاف ہونے چاہیں۔ ان انتخابات میں سب کو آزادانہ طور پر حصہ لینے کا موقع ملنا چاہیے۔نجی چینل دنیا نیوز کے مطابق پاکستان مسلم لیگ قائداعظم کے صدر چودھری شجاعت حسین اور سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الہیٰ سے

نگران وزیراعلیٰ گلگت بلتستان میر افضل خان نے لاہور میں ان کی رہائشگاہ پر ملاقات کی۔ ملاقات میں وفاقی وزیر طارق بشیر چیمہ، سینیٹر کامل علی آغا، شافع حسین اور جی ایم سکندر بھی شریک ہوئے۔چودھری شجاعت حسین اور چودھری پرویز الہیٰ کا کہنا تھا کہ گلگت بلتستان پاکستان کی معیشت اور دفاع کےلیےبڑی اہمیت کاحامل اورسی پیک کاگیٹ وےہے۔ان کاکہناتھاکہ ہماری جماعت نےہمیشہ اس علاقہ کی اہمیت کو تسلیم کیا ہے،پاکستان کی سلامتی، دفاع اور اقتصادی ترقی کے لیے اس کی بہت اہمیت ہے جسے نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔اس موقع پر نگران وزیراعلیٰ میر افضل خان کا کہنا تھا کہ گلگت بلتستان کو عبوری صوبائی حیثیت دینے کا مطالبہ سب سے پہلے چودھری شجاعت حسین نے پیش کیا تھا۔ چودھری شجاعت نے اس خطہ کی ترقی، خوشحالی اور حقوق کی حفاظت کیلئے اہم کردار ادا کیا ہے۔ جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق رہنما ن لیگ میاں جلیل شرقپوری نے کہا ہے کہ نوازشریف سے کچھ اصولی اختلاف ہیں، اداروں کے ساتھ ٹکراﺅ کسی صورت برداشت نہیں ہے۔ جیو نیوز کے مطابق مسلم لیگ ن کے باغی ممبر صوبائی اسمبلی میاں جلیل شرقپور ی نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن کی ٹکٹ نوازشریف کے کہنے پر لیا تھا۔ مجھے قیادت کے فیصلے سے اختلاف رائے کا حق ہے۔ اختلاف رائے سننا اور برداشت کرنا ہی جمہوریت ہے ۔مسلم لیگ ن کے رہنما جلیل شرقپوری کا کہنا تھا کہ مجھے نوازشریف سے کچھ اصولی اختلاف ہیں۔پارٹی قیادت کا فیصلہ غیر مناسب ہو تو اظہار رائے کا حق ہے۔ اختلاف رائے کو برداشت کرنا ہی اصل جمہوریت ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ نوازشریف کے دور میں ماڈل ٹاﺅن میں چڑھائی کی گئی، اداروں کے ساتھ ٹکراﺅ کسی صورت برداشت نہیں کیا جاسکتا۔اسمبلی کے باہر کل میرے ساتھ ہونے والے واقعہ کی سب نے مذمت اور اظہار افسوس کیا لیکن قیادت کی جانب سے ابھی تک کوئی بھی بیان نہیں دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اگر نوازشریف نے کل تک میرے ساتھ ناروا سلوک کا نوٹس نہیں لیا تو سمجھوں گا نوازشریف بھی اسی نظریئے کے مالک ہیں۔پارٹی میں کوئی بلاک بنانے کی کوشش نہیں کی، اگردوسروں کو میرا موقف اچھا لگا تو بلاک خود بخود بن جائے گا۔

Share

About admin

Check Also

مہنگائی کنٹرول سے باہر ہونے پر وزیراعظم عمران خان کا استعفیٰ؟ خبر نے ملک بھر میں تھر تھلی مچا دی

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور قائد حزب اختلاف شہبازشریف نے پٹرولیم مصنوعات کی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Powered by themekiller.com