Breaking News
Home / اہم خبریں / تعلیمی اداروں کے بعد حکومت نے تاجروں پر بجلی گرا دی ، بڑا اعلان کر دیا گیا

تعلیمی اداروں کے بعد حکومت نے تاجروں پر بجلی گرا دی ، بڑا اعلان کر دیا گیا

لاہور(نیوز ڈیسک) کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے کیے پنجاب حکومت نے دکانیں شام 6 بجے بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ذرائع کے مطابق پنجاب حکمت کی جانب سے دکانیں شام 6 بجے بند کرنے کا یہ فیصلہ کورونا کے ایس او پیز پر عمل نہ ہونے کی وجہ کیا گیا ہے۔لاہور چیمبر آف کامرس کی جانب سے

دکانیں شام 6 بجے بند کرنے کے حکومتی فیصلے کی مخالفت کی گئی ہے۔ لاہور چیمبر کے صدر طارق مصباح کا کہنا ہے کہ دکانیں 6 بجے بند کرنے کے فیصلے سے مارکیٹوں میں رش بڑھے گا، وقت کم نہ کیا جائے، تاجر کورونا ایس او پیز پر 100 فیصد عمل کریں گے۔ملک میں کورونا وائرس سے مزید 34 افراد انتقال کرگئے جب کہ مزید 2756 افراد میں وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔سرکاری پورٹل کے مطابق پاکستان میں کورونا کیسز سے ہلاکتوں کی تعداد 7696 ہوگئی ہے جب مجموعی کیسز 3 لاکھ 76929 تک جا پہنچے ہیں۔ دوسری جانب پنجاب کے وزیر تعلیم مراد راس کا کہنا ہےکہ کورونا میں صرف اسکول بند کرنے سے کچھ نہیں ہوگا بلکہ بچوں کے پارکوں اور شاپنگ مالز میں داخلے پر بھی پابندی ہونی چاہیے۔لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مراد راس نے کہاکہ اس ہفتے سے 10جنوری تک تمام تر چھوٹے بڑے کالجزبند رہیں گے، ہم اسکول بند نہیں کرنا چاہتےتھے لیکن کورونا کے بڑھتے کیسز کے باعث یہ فیصلہ کرنا پڑا۔انہوں نے کہا کہ بچوں کو ہوم ورک کے بغیر نہیں جانے دیا جائے گا اور ہوم ورک کی بنیاد پر اگلی کلاس میں پروموشن پر ہوگا، ٹیچرز کو ہفتے میں دو دن پیر اور جمعرات کو اسکول آنا ہوگا جب کہ 50 فیصد ٹیچر پیر اور باقی 50 فیصد جمعرات کو اسکول آئیں گے۔صوبائی وزیر تعلیم کا کہنا تھا کہ وہ اسکول بند کرنے کے حق میں نہیں ہیں لیکن کورونا کے بڑھتے کیسز کے باعث یہ فیصلہ کیا جب کہ صرف اسکول بند کرنے سے کچھ نہیں ہوگا، ​​​​​​​ پارکس، شاپنگ مال دیگر تفریحی مقامات پر بھی بچوں کے داخلے پر پابندی ہونی چاہیے۔

Share

About admin

Check Also

وزیراعظم غصے میں آ چکے، تنگ آ کر اسمبلیاں توڑ دیںگے، حکومتی صفوں میں ہلچل مچ گئی

لاہور (ڈیجیٹل پاکستانی ٹی وی نیوز)وزیراعظم غصے میں آ چکے، تنگ آ کر اسمبلیاں توڑ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Powered by themekiller.com