Breaking News
Home / آرٹیکلز / ایک سردار جی گھر سے نکلے تو دروازے پر پڑے کیلے کے چھلکے سے پھسل کر گرگئے ، اگلے دن بھی چھلکا دروازے کے سامنے پڑا تھا اور وہ پھر گر پڑے ، تیسرے دن گھر سے نکلے تو چھلکے کو دیکھتے ہی بولے ۔۔۔۔۔ روف کلاسرا نے شاندار لطیفے سے پاکستانی قوم کو بہت کچھ سمجھا دیا ، کوزے میں دریا بند کر دیا

ایک سردار جی گھر سے نکلے تو دروازے پر پڑے کیلے کے چھلکے سے پھسل کر گرگئے ، اگلے دن بھی چھلکا دروازے کے سامنے پڑا تھا اور وہ پھر گر پڑے ، تیسرے دن گھر سے نکلے تو چھلکے کو دیکھتے ہی بولے ۔۔۔۔۔ روف کلاسرا نے شاندار لطیفے سے پاکستانی قوم کو بہت کچھ سمجھا دیا ، کوزے میں دریا بند کر دیا

لاہور (ویب ڈیسک) جب 2006 ء میں لندن میں چارٹر آف ڈیموکریسی کا ڈرامہ رچایا گیا تو اُس وقت بھی میڈیا کو یہی کہانیاں سنائی گئی تھیں کہ سیاستدانوں نے ماضی میں ایک دوسرے کے خلاف بہت غلط کام کیے جس سے جمہوریت کمزور ہوئی ‘ اب ہم اچھے بچے بن گئے ہیں‘

نامور کالم نگار رؤف کلاسرا اپنے ایک کالم میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔کسی کے ہاتھ میں کٹھ پتلی نہیں بنیں گے اور پاکستان کی تقدیر بدل دیں گے۔اس پر بہت سے سمجھدار صحافیوں نے اپنا کام چھوڑ کر دن رات بینظیر بھٹو اور نواز شریف کیلئے مفت کنسلٹنسی کا کام شروع کردیا اور پورے ملک میں دھڑا دھڑ کالم چھپنے لگے‘ خبریں لگنے لگیں‘ تبصرے ہونے لگے کہ دیکھو کیسے پیپلز پارٹی اور نواز لیگ بدل گئے ہیں اور اب پاکستان کی تقدیر کو بدلنے سے کوئی نہیں روک سکتا ۔ ان صحافیوں کو ان سیاستدانوں نے استعمال کیا اور انہیں باقاعدہ چارٹر آف ڈیموکریسی کا خواب دکھا کر میڈیا کو ساتھ ملایا ‘ مگر جب پاکستان لوٹے تو سب نے وہیں سے کام شروع کیا جہاں چھوڑ گئے تھے۔ میڈیا کو ایسے منصوبوں میں ساتھ ملانے کا مقصد یہ ہوتا ہے کہ صحافی اور کالم نگاراتراتے پھرتے ہیں کہ فلاں فلاں لیڈراُن سے مشورے کرتے ہیں‘ اُن کے کہنے پر چلتے ہیں اور پھر میڈیا ہی ان سیاستدانوں کے کرتوتوں کا دفاع کرتا ہے۔ انہیں یہ پتہ نہیں ہوتا کہ وہ لیڈر وقتی طو رپر صحافیوں اور کالم نگاروں کو اپنے سیاسی مقاصد کیلئے استعمال کررہے ہوتے ہیں تاکہ وہ عوام میں ان کا امیج بہتر بناتے رہیں اور جب کام نکل جائے گا تو انہیں مکھن سے بال کی طرح نکال پھینکیں گے۔ 2014 ء کی بات ہے‘ ایک سینیٹر کے گھر بیٹھے تھے اور وہاں زرداری صاحب کی مالی بد عنوانی پر گفتگو ہورہی تھی۔ ایک سینئر صحافی نے سینیٹر پرویز رشید سے‘ جو وزیر بن چکے تھے‘ پوچھ لیا کہ زرداری کا احتساب کب شروع کر رہے ہیں؟

یہ سن کر پرویز رشید غصے میںآگئے اور بولے: آپ کو اتنا شوق ہے تو آپ الیکشن لڑ کر خود یہ کام کرلیں۔ اُس صحافی نے جواب دیا :یہ جواب اُس وقت دیتے جب اپوزیشن میں تھے‘ اُس وقت تو مجھے بلا کر کہتے تھے کہ دیکھ لینا ہم نے زرداری سے پیسہ نکلوانا ہے۔ خواجہ آصف سے مشرف دور میں دعا سلام شروع ہوئی تھی اور ان کی قومی اسمبلی میں دھواں دھار تقریروں کا میں فین بن گیا ۔ خواجہ آصف نے اُس دن سب کا دل جیت لیا تھا جب قومی اسمبلی میں ہاتھ باندھ کر پوری قوم سے یہ کہہ کر معافی مانگی کہ ان کے والد خواجہ محمد صفدر نے جنرل ضیا کا ساتھ دے کر بڑی غلطی کی تھی ۔ میرے نزدیک یہ خواجہ صاحب کا بڑا پن تھا ورنہ کون اپنے باپ کو غلط سمجھ کر معافی مانگ سکتا ہے۔ شاید وہ مشرف کا دور تھا‘ لہٰذا ایسی تقریریں نواز شریف کیمپ کو سوٹ کرتی تھیں اور انہیں ہی مسیحا سمجھ لیا گیا تھا۔ لوگ پرانی باتیں بھول جانا چاہتے تھے کہ ملک میں نئی شروعات ہوں‘ اس لیے جب بینظیر بھٹو اور نوازشریف نے 2006 ء میں چارٹر آف ڈیموکریسی پر دستخط کر کے پوری قوم کو خوشخبری سنائی کہ اب دونوں لیڈر ملک کی تقدیر بدل دیں گے تو لوگ ان کے چکر میں آگئے‘ مگر وہ جونہی پاکستان لوٹے تو کام وہیں سے شروع کیا جہاں چھوڑ کر گئے تھے۔ چوہدری نثار علی خان اور شہباز شریف کی جنرل کیانی سے خفیہ ملاقاتیں بھی شروع ہوگئیں ‘حالانکہ یہ معاہدہ تھاکہ اب ا یسا نہیں ہو گا۔اگر یہ لوگ سیانے ہوتے تو انہیں 2008 ء میں بہترین موقع ملا تھا۔یہ ملک کی تقدیر بدل دیتے‘ گورننس کی مدد سے ہمیشہ کیلئے ایسے راستوں کا تعین کرتے کہ پھر خواجہ آصف کو سپہ سالار کوفون کر کے اپنی سیٹ بچانے کی منت نہ کرنا پڑتی۔ ان سیاسی شکاریوں کا اعتماد دیکھیں کہ عوام اور میڈیا کو پھانسنے کیلئے جال بھی پرانا لاتے ہیں ۔ وہی گھسٹی پٹی باتیں‘ وہی ماضی سے سیکھنے کی قسمیں‘ وہی نئی شروعات کی باتیں‘ وہی میٖڈیا کو دہائی اور وہی قسمیں اور وعدے ۔ان سیاستدانوں کے ہاتھوں بار بار استعمال ہونے کے بعد پاکستانی میڈیا اور عوام کا وہی حال ہوچکا جو ایک سردار کا ہوا تھا جوگھر سے نکلا تو دروازے پر پڑے کیلے کے چھلکے سے پھسل کر گر گیا ۔ اگلے دن بھی چھلکا دروازے کے سامنے پڑا تھا اور پھر پھسل کر گر پڑا۔ تیسرے دن نکلا تو وہیں پڑے کیلے کا چھلکا دیکھ کر رکا اورگہری سانس لے کر بولا: ہائے ربا اج فیر گرنا پؤ گا۔

Share

About admin

Check Also

رات کو سونے سے پہلے یہ آیت لازمی پڑھ کر سونا صبح اٹھتے ہی اتنی زیادہ دولت ملے گی کہ سنبھال نہ سکیں گے

ڈیجیٹل پاکستانی ٹی وی نیوز! سارا دن آپ کے پاس اتنا رزق آئے گا اتنی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Powered by themekiller.com