Breaking News
Home / پاکستان / یہ ہوئی نا ں بات ۔۔۔!!!حکومت کا جنسی زیادتی میں ملوث مجرموں کو مردانگی سے محروم کرنےکا ارادہ، اس مقصد کے لیے کیا طریقہ کار اختیار کیا جائے گا؟ پوری قوم عش عش کر اٹھی

یہ ہوئی نا ں بات ۔۔۔!!!حکومت کا جنسی زیادتی میں ملوث مجرموں کو مردانگی سے محروم کرنےکا ارادہ، اس مقصد کے لیے کیا طریقہ کار اختیار کیا جائے گا؟ پوری قوم عش عش کر اٹھی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) فیصل واوڈا کا جنسی زیادتی میں ملوث مجرموں کو مردانگی سے محروم کرنے کا بل پارلیمنٹ میں پیش کرنے کا اعلان، وفاقی وزیر کا کہنا ہے کہ ان درندوں کی سرعام پھانسی پہ اگر “انسانی حقوق کے علمبرداروں” کو تکلیف ہے تو ہر حال میں فوری طور پر ان وحشیوں کے لئے آختہ کاری

کا قانون پاس کیا جائے۔ تفصیلات کے مطابق لاہور موٹروے پر خاتون کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنائے جانے کے معاملے پر وفاقی وزیر فیصل واوڈا نے ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ وزیراعظم سے ابھی ملاقات ختم ہوئی ہے- وزیراعظم پہلے ہی مروہ کیس اور موٹروے سانحے کا نوٹس لے چکے ہیں-میری تجویز یہ تھی کہ ان درندوں کی سرعام پھانسی پہ اگر “انسانی حقوق کے علمبرداروں” کو تکلیف ہے تو ہر حال میں فوری طور پر ان وحشیوں کے لئے Castration(آختہ کاری) کا قانون پاس کیا جائے۔وفاقی وزیر کا مزید کہنا ہے کہ میری تمام پارلیمینٹیرینز سے استدعا ہے کہ اس معاملے میں سیاست اور اختلافات کو پس پشت ڈال کے آگے بڑھیں- اس قانون سازی کے لئے متفق ہو – آخر یہ اس ملک کی عزت و وقار کا معاملہ ہے- یہ ہم سب کی ماوؤں بہنوں اور بیٹیوں کا معاملہ ہے- فیصل واوڈا کی اس تجویز پر سینیٹر فیصل جاوید خان کا کہنا ہے کہ آپ سے سو فیصد اتفاق ہے – یہ لوگ انسانوں کے روپ میں درندے ہیں – ان درندوں کو نشان عبرت بنانا چاہیے – انہیں سرعام پھانسی دینی چاہیے – قانون سازی کے ساتھ ساتھ امپلیمنٹیشن بہت ضروری – زینب الرٹ بل کو بھی فوری طور پر امپلیمنٹ کرنا ہوگا۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق پنجاب کے دارالحکومت میں واقع گجر پورہ میں خاتون پر تشدد اور زیادتی کرنے والے ملزمان کے گاؤں کی شناخت ہوگئی۔آئی جی پنجاب نے بتایا کہ گجر پورہ زیادتی کیس میں اہم پیشرفت سامنے آئی ہے، پولیس نے تحقیقات کر کے ملزمان کے گاؤں کا سراغ لگا لیا۔ انہوں نے بتایا کہ مسلح افراد نے ڈنڈوں سے خاتون کو تشدد کا نشانہ بنایا اور پھر شیشہ توڑ کر انہیں زیادتی کا نشانہ بنایا جس کی میڈیکل رپورٹ میں بھی تصدیق ہوگئی ہے۔دوسری جانب پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ پولیس نےسیل شدہ سیمپل پنجاب فرانزک لیب بھیج دیے جبکہ 5کلومیٹر علاقے کی تلاشی لی گئی اور تین مقامات کی جیو فینسنگ مکمل کرلی گئی ہے۔ذرائع کے مطابق پولیس نےعلاقےکے سابقہ ریکارڈیافتہ ملزمان کی تلاش شروع کردی ہے، کرول گاؤں اور اطراف میں پولیس کی 26 ٹیمیں موجود ہیں جبکہ تفتیشی ٹیم جائے وقوعہ سے شواہد اکھٹے کرنے کا کام کررہی ہے۔پولیس نے تین مقامات کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی حاصل کرلی ہے، تفتیشی حکام کا کہنا ہے کہ پولیس جدید انداز سے کیس کو حل کرنے کے لیے کوشاں ہے، اب تک چودہ افراد کو حراست لے لیا گیا ہے۔دوسری جانب سی سی پی او لاہور نے دعویٰ کیا ہے کہ ہم ملزمان کے قریب پہنچ گئے اور انہیں 48 گھنٹوں میں گرفتار کرلیں گے۔

Share

About admin

Check Also

”شادی کے تین سال بعد ساس نے بہو سے پو چھا کہ میں تم کو اتنی کھری کھری سناتی ہوں تم پلٹ کر جواب دیتی ہو نہ غصہ کر تی ہو۔۔۔“

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) شادی کے تین سال کے بعد سا سو ماں نے بہو سے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Powered by themekiller.com